پڑھائی کیلیے پھل بیچنے والی طالبہ سے تاجر نے ایک درجن آم سوا لاکھ میں خرید لیے

پڑھائی کیلیے پھل بیچنے والی طالبہ سے تاجر نے ایک درجن آم سوا لاکھ میں خرید لیے
Spread the love

جھاڑ کھنڈ: بھارت میں آن لائن کلاس لینے کے لیے پھل بیچ کر موبائل فون کے لیے رقم جمع کرنے والی پھل طالبہ سے بزنس مین نے ایک درجن آم سوا لاکھ میں خرید کر ضرورت پوری کردی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق جھاڑکھنڈ کے علاقے جمشید پور میں 11 سالہ طالبہ کو آن لائن کلاس لینے کے لیے اسمارٹ موبائل فون کی ضرورت تھی تاہم والدین موبائل فون خریدنے کی استطاعت نہیں رکھتے تھے جس پر بچی نے پھل بیچ کر اپنی ضرورت پوری کرنے کی ٹھانی۔

پانچویں جماعت کی طالبہ تلسی کماری پھل تو فروخت کرنے لگی تاہم اس سے ہونے والی آمدنی گھر کے راشن میں صرف ہوجاتی تھی جس سے بچی کو تعلیم جاری نہ رکھنے کا خدشہ پیدا ہوگیا اور وہ مایوس ہوکر غمزدہ رہنے لگی۔

تلسی کماری کی یہ کہانی ایک صحافی نے سوشل میڈیا پر وائرل کردی جسے ممبئی کے ایک بزنس مین نے پڑھا اور تلسی کو خطیر رقم بھیجوا دی تاہم تلسی نے امداد کے بجائے پھل خریدنے کی شرط رکھی جس پر بزنس مین نے فی آم دس ہزار روپے کے حساب سے ایک درجن آم خرید لیے۔

پُرعزم تلسی کماری کی والدہ نے بزنس مین کا شکریہ ادا کرتے ہوئے بتایا کہ ان ایک لاکھ 20 ہزار روپوں سے وہ تلسی کے لیے اسمارٹ فون اور دیگر تعلیمی مواد خریدیں گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں