بیک ڈور مذاکرات ناکام، لانگ مارچ کا اعلان جمعہ کو کروں گا، عمران خان

بیک ڈور مذاکرات ناکام، لانگ مارچ کا اعلان جمعہ کو کروں گا، عمران خان
Spread the love

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ ہمارے بیک ڈور مذاکرات ہوئے مگر کوئی نتیجہ نظر نہیں آرہا، میں جمعہ کو لانگ مارچ کی تاریخ کا اعلان کروں گا۔

بنی گالہ میں سینیٹر اعظم سواتی کی رہائی کے بعد عمران خان نے مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے آغاز میں کہا کہ میں سیاسی بات نہیں کروں گا بلکہ ملک میں جاری ظلم کے خلاف بات کروں گا۔

عمران خان نے کہا کہ اعظم سواتی کو اُن کی بیٹی اور نواسی کے سامنے تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور پھر انہیں گھر سے اٹھا کر کسی اور کے حوالے کیا گیا، اس سے پہلے شہباز گل، عمران خان سمیت دیگر کے خلاف بھی اسی طرح کارروائی کی گئی اور ادارے خاموش ہیں۔
چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ سوشل میڈیا کے لڑکے بھی بتاتے ہیں کہ انہیں ’نامعلوم افراد‘ اٹھا کر لے جاتے اور تشدد کر کے چھوڑ دیتے ہیں، یہ سب اس لیے کیا جارہا ہے کہ میرے خلاف بیان لیے جاسکیں مگر وہ اس میں کامیاب نہیں ہورہے۔

ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے عمران خان نے بیک ڈور بات چیت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ’سیاسی جماعتوں سے بیک ڈور مذاکرات معمول کی بات ہے مگر مجھے اب کوئی نتیجہ نظر نہیں آرہا کیونکہ ہم ملک میں جمہوریت کی بحالی کا مطالبہ کررہے ہیں‘۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ میں جمعے کو لانگ مارچ کی تاریخ کا اعلان کروں گا اور اس بار ہم بھرپور تیاری کے ساتھ نکلیں گے، عوام کا سمندر جب اسلام آباد پہنچے گا تو انہیں خود ہی معلوم ہوجائے گا۔

’فیٹف گرے لسٹ سے ہماری ٹیم نے نکالا‘

عمران خان نے فیٹف کی گرے لسٹ سے نکلنے پر قوم کو مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ ’اس کے لیے ہم نے حماد اظہر کی کپتانی میں ایک ٹیم بنائی جس نے بہت شاندار کام کر کے ملک کو گرے لسٹ سے نکالا‘۔

’میری گرفتاری کے بعد بھی لانگ مارچ ہوگا‘

عمران خان کا کہنا تھا کہ کیا اگر یہ مجھے پکڑلیں گے تو کیا لانگ مارچ نہیں ہو گا؟ جتنے بڑے جلسے میں نے کیے، چیلنج کرتا ہوں کوئی نہیں کر سکتا، اگر یہ احتجاج کا راستہ روکیں گے، انتشار اور ملک بند ہو جائے گا۔

’عمران خان کے ساتھ ہیں، دنیا کے تمام فورمز پر اپنا معاملہ اٹھاؤں گا‘

اس موقع پر بات کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹر اعظم سواتی نے کہا کہ نام نہاد جمہوری دور کے اندر سینیٹر کو ماورائے آئین گرفتار، تشدد کیا گیا، 17 سال سے سینیٹ کے اندر ہوں، آج اعظم سواتی نہیں ایک سینیٹر بول رہا ہے، وہ کون لوگ تھے جنہوں نے تشدد کیا، اللہ کا شکرہے سیسہ پلائی دیوارکی طرح عمران کے ساتھ کھڑے ہیں، دنیا کے تمام انصاف کے فورمزپراپنا معاملہ اٹھاؤں گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں