پاکستان کیلئے قرض پروگرام میں توسیع، آئی ایم ایف کا شرائط پوری کرنے کا مطالبہ

پاکستان کیلئے قرض پروگرام میں توسیع، آئی ایم ایف کا شرائط پوری کرنے کا مطالبہ
Spread the love

اسلام آباد: آئی ایم ایف نے پاکستان سے طے شدہ شرائم پوری کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے قرض پروگرام کو ایک سال کیلئے توسیع دینے پر رضا مندی ظاہر کردی۔

امریکی دارالحکومت واشنگٹن میں آئی ایم ایف اور پاکستان کے درمیان سائیڈ لائن میٹنگ ہوئی جس میں قرض پروگرام کی توسیع سمیت کئی معاملات زیر بحث آئے۔

آئی ایم ایف کا توسیع شدہ پروگرام ستمبر میں ختم ہو رہا ہے مگر آئی ایم ایف پروگرام کو ایک سال کے لیے توسیع دینے پر رضامند ہوگیا ہے۔
واضح رہے کہ پاکستان نے آئی ایم ایف کا توسیع شدہ پروگرام ایک سال بڑھانےکی درخواست کی ہے۔

ذرائع کے مطابق پاکستان آئی ایم ایف سے تکنیکی سطح پر بات چیت آئندہ ہفتے شروع کرے گا جب کہ آئی ایم ایف اسٹاف سطح پر مذاکرات مکمل کرنے کے لیے وسط مئی میں مشن پاکستان بھیجے گا۔

آئی ایم ایف نے مطالبہ کیا کہ پاکستان آئی ایم ایف کے ساتھ پروگرام میں طے شدہ شرائط پوری کرے اور سبسڈیز جلد سے جلد واپس لیکر دسمبر میں طے پائے ٹارگٹ میں تبدیلی کے اعداد کا جائزہ لے۔

آئی ایم سے مذاکرات میں اتفاق ہوا ہے کہ سابقہ حکومت کی فیول، تیل اور بجلی پر سبسڈی واپس لی جائے گی اور آئی ایم ایف جائزہ مشن آنے سے قبل تیل اور بجلی کی قیمتوں میں اضافہ کیا جائے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ساتویں ریویو پر اتفاق ہونے کے بعدآئی ایم ایف بورڈ کو بھجوایا جائے گا جس کے بعد آئی ایم ایف بورڈ پاکستان کواگلی قسط کی منظوری دے گا۔

انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ (آئی ایم ایف) کا کہنا تھا کہ پاکستان دسمبر میں طے شدہ ٹارگٹ سے کم سے کم انحراف کرے کیوں کہ آئی ایم ایف بجٹ کیلئے مجموعی حکمت عملی پر اتفاق چاہتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں